Most Romantic and Bold Urdu Novels List

میرا نام امبر ہے اور میں ایک غریب خاندان سے تعلق رکھتی ہوں میری دو بیٹیاں اور ایک بیٹا ہے میرا شوہر سارا دن نشہ کرتا ہے رات کو گھر واپس آتا تو کسی چیز کا پتا نہیں ہوتا اور آکر سو جاتا مجھے بچوں کا پیٹ پالنے کے لیے لوگوں کے گھروں میں کام کرنا پڑتا ایک دن میں اپنے گھر سے نکل کر گلی میں پیدل جا رہی تھی کہ ایک رکشے کے اندر ایک بوڑھا آدمی بیٹھا تھا اس نے مجھ سے پوچھا بیٹی کہاں جا رہی ہو میں نے کہا میرے بچے بھوکے ہیں اور مجھے کوئی کام نہیں مل رہا میں کام کی تلاش میں جا رہی ہوں

میری بات سنتے ہی اس نے کہا اگر میرے گھر میں کام کرنا چاہو تو میں تمہیں اچھی تنخواہ دوں گا یہ سن کر میں اس کے ساتھ چل پڑی وہ مجھے اپنے گھر کے اندر لے گیا اور بولا بیٹی یہ میرا گھر ہے دیکھ لو آج کام نہ کرو چلے جاؤ کل کام کرنے کے لئے آ جانا میں نے کہا ٹھیک ہے میں کل آ جاؤں گی

صبح ہوئی تو میں چل پڑی جیسے ہی میں اس کے گھر پہنچی اس نے کہا بیٹی تم کام کرو میں باہر سے ہو کر آتا ہوں وہ باہر چلا گیا اور تقریبا تیس منٹ بعد آیا اور مجھے کہا چلو میرے کمرے کی صفائی کر دو میں صفائی کرنے لگی تو وہ میرے ساتھ بدتمیزی کرنے لگا میرا جسم کو چھیڑنے لگا مجھے پہلے تو یقین تھا کہ میرے نے ابو کی عمر کا ہے کچھ نہیں کرے گا

لیکن وہ غلط باتیں کرنے لگا میں بھاگنے لگی اس نے میرے ماتھے پر پستول رکھ دیا اور کہا اگر کسی کو بلایا تو میں تم کو جان سے مار دوں گا میں ڈر کر خاموش ہوگئی اس نے میرے سامنے کوئی عجیب سی گولی کھائی اور آدھا گھنٹا میرے ساتھ بدفعلی کرتا رہا اور میں ڈرکے مارے چپ رہی آدھے گھنٹے کے بعد اس نے مجھے گھرسے باہر نکال دیا اور کہا کہ اگر کسی کو بتایا تو تم بچھ نہیں پاؤں گی میں تو پیسے دے کر بچ جاؤں گا اور جب میں گھر آئی تو دو دن درد کی وجہ سے چار پائی پر ہی لیٹی رہی ہیں اور نہ ہی کوئی کام کر پائی.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *