Urdu Romantic Novels

میرا شوہر مجھے چندا کہ کر پکارتا ہے میری شادی کو 2 سال ہو چکے ہیں جب میری شادی ہوئی تب میرے شوہر نے مجھے بتایا کہ تمہاری چھا تیاں بہت چھوٹی ہیں تب میں بہت شرمندہ ہوئی۔ یا یوں کہہ لیں کہ مجھے احساس کمتری ہوا میرے تاثرات دیکھ کر میرا شوہر نے کہا پریشان ہونے کی کوئی ضرورت نہیں میں ہوں نا خدمت کرنے کے لیے وقت کے ساتھ ساتھ سب ٹھیک ہو جائے گا۔پیر چند دنوں بعد میرے شوہر نے میرے چھاتیوں کا مساج شروع کر دیا

وہ یوں کرتے کے پہلے میری چھاتیوں کے اوپر الٹے ہاتھ کے ساتھ نرمی سے مساج کرتے۔پھر وہ مجھے اپنے اوپر بٹھا لیتے میں باقی کام کرتی اور وہ میری چھاتیوں کو چومتے تھے اس عمل سے مجھے بہت مزہ آتا ہے اور میں کہیں بار فری ہو جاتی. وہ مجھے گھوڑی بننے کو کہتے اس طرح میری چھاتیاں نیچے کی طرف ہو جاتی ہے پھر وہ میری ایک سائیڈ پر بیٹھ کر میری چھاتیوں کی مساج کرتے۔تھوڑی ہی مساج کے بعد مجھے اپنی چھا تیاں وزنی محسوس ہونے لگی

 نہ جانے کیا جادو تھا میری شوہر کے ہاتھوں میں کہ چند دینا کے مساج سے مجھے اپنی چھاتی بڑی بڑی لگنے لگی میرے کپڑے مجھے تنگ آنے لگے میں نے اپنے شوہر سے کہا بہت بڑے ہوگئے ہیں۔وہ بولا نہیں پاگل ابھی اور بڑھے کرنے ہیں جب مساج کرتے کرتے دو تین ماہ گزر گئے تو میری چھاتیاں بھرے غبارے کی طرح پھول گئی اور مجھے بہت عجیب لگتا اور ایسا محسوس ہوتا کہ میرے جسم میں سب سے وزنی چیز میری چھا تیاں ہیں

 میں بہت پریشان ہوئی کیونکہ میرے جہیز میں آئے ہوئے سارے کپڑے مجھے تنگ ہوگئے تھے لیکن جب میرے دوسری عورتوں نے چھاتیوں کی تعریف کرنا شروع کی تو میری خوشی کی انتہا نہ رہی ہوں سب عورتوں نے میرے سے پوچھا کون سی دوائی کھاتی ہوں جس سے اتنے کم وقت میں تمہارے چھا تیاں اتنی بڑی ہو گئی ہیں مجھے شرم آتی اور میں کہتی کہ خود بخود ہو گئی ہیں لیکن وہ میری بات کا یقین نہیں کرتی میں جہاں بھی جاتی مرد تو کیا عورتیں بھی میری   طرف دیکھتی رہ جاتی میں بہت زیادہ پر اعتماد ہو گئی تھی لیکن ان سب سے بڑھ کر میرا شوہر مجھ سے بہت محبت

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *