most romantic urdu novels

میرا نام احمد ہے یہ میری سچی کہانی ہے کنزہ اور میں ایک دوسرے سے بہت پیار کرتے تھے اور ہماری منگنی بھی ہو گئی تھی. پھر اچانک ہمارے خاندان کی آپس میں لڑائی کی وجہ سے ہماری منگنی ٹوٹ گئی تھی اُس کے گھر والوں نے اُس پر بہت سی پابندیاں لگا رکھی تھیں اور ہمارا رابطہ بھی نہیں ہو رہا تھا اُس نے کسی کے ہاتھ خط بیجھا جس میں یہ لکھا تھا میرے گھر والے میری شادی کسی اور سے کرنا چاہتے ہیں.

مگر مجھے تم سے کرنی ہے اور اگر میری شادی تم سے نہ ہوئی تو میں اپنی جان دیے دونگی پلیز تم جیسے بھی کرومجھے یہاں سے لے جاو میں اس کا خط پڑھ کر بہت زیادہ رویا میں اس معاملے میں کچھ کر بھی نہیں سکتا تھا کیونکہ میری عمر آٹھارہ سال سے بھی کم تھی اور کوٹ میرج بھی ہماری نہیں ہو سکتی تھی میں نے اسے خط لکھا کہ کچھ وقت انتظار کر لو ہم آٹھارہ سال کے ہوتے ہی کوٹ میں شادی کر لیں گے

مگراس خط کا کوئی جواب نہیں آیا ایک مہینے کے بعد پتا چلا کہ اس کی منگنی کر دی گئی ہے میں سمجھا اُس کی منگنی زبردستی ہو گئی ہے پھر پتا چلا کہ وہ اپنے منگیتر کے ساتھ بہت خوش ہے موبائل بھی ہے میں نے کسی سے نمبر لے کر رابطہ کرنے کی کوشش کی تو اس نے میرے ساتھ بات کرنے سے انکار کر دیا

میں بہت ٹوٹ گیا تھا میرے درد کو سمجھنے والا کوئی نہیں تھا پھر ایک دن اُس کا رشتہ وہاں سے بھی ٹوٹ گیا مجھے اس بات کی بہت خوشی ہوئی کہ اب شاید وہ میرے پاس لوٹ آئے اور اب دونوں آٹھارہ سال کے بھی ہو گئے تھے تو کوٹ میرج میں بھی کوئی مسلہ نہیں تھا میں نے اُس کا بہت انتظار کیا لیکن وہ واپس نہیں آئی

بلکہ اب کسی اور کے ساتھ شادی کرنے جا رہی تھی جبکہ وہ لڑکا پہلے سے شادی شدہ آدمی ہے اور اس عمر اور اُس کی عمر میں بیس سال کا فرق ہے میں بہت اذیت میں ہوں ناجانے وہ یہ سب کیوں کر رہی ہے وہ ایسی تو بالکل نہیں تھی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *